Sunday, 31 May 2015

منصور آفاق ایک معتبر فلمی نقاد






Mansoor Afaq is a considerable film critique as well.


Mansoor Afaq is a considerable film critique as well. He has been a film and TV programe columnist for daily newspaper Nawa e Waqt over a long period of time. He has delivered lectures for East Film Academy under the flag of Society of Culture and Heritage. He has written a book "A shot of butterfly" in Urdu language.


منصور آفاق ایک معتبر فلمی نقاد


منصور آفاق ایک معتبر فلمی نقاد بھی ہیں۔وہ ایک طویل عرصہ تک روزنامہ نوائے وقت میں فلموں اور ٹی وی پروگراموں 
پر تبصرے کر تے ہیں ۔برطانیہ میں سوسائٹی آف کلچر اینڈ ہیرٹج کے تحت کام کرنے والی ایسٹ فلم اکیڈمی میں اداکاری اور سکرپٹ رائیٹنگ پر لیکچربھی دیتے رہے ہیں۔انہوں نے اردو میں ڈائریکشن کے موضوع ایک کتاب تتلی کاشاٹ کےنام سے بھی تحریر کی ہے۔

Tuesday, 7 April 2015

پیغمبرِ انسانیت کے نام پہلا خط

مرے آقا مرے مولا
یہ کیا ۔ ۔ کیسے ستم کی داستاں میرے رگ و پے میں سرایت کر گئی ہے 
کہ تیرے نعت گوکومرثیہ لکھنا پڑا ہے۔
نواح ِ کربلا میں ظلم کی کیسی کہانی 
وقت بُنتا جارہا ہے۔۔
 مجھے لگتا ہے شاید قریہ ءکرب و بلا کی
 قسمتِ خوں ریزمیں بس مرثیے لکھے ہوئے ہیں 
حسین ابن علی کے خون کی تحریک میں اتنی طوالت کس لئے ہے۔
مجھے اس دشت کی تاریخ کو معلوم کرنا ہے۔ 
 مجھے یہ سوچنا ہے آدمی کے خون کی یہ ریت پیاسی اسقدر کیوں ہے ۔ 
یزیدیت ہمیشہ کیوں اسی کوجنگ کا میداں بناتی ہے۔
یہیں سے باپ کیوں بچوں کی لاشیں اپنے ہاتھوں پر اٹھاتے ہیں ۔
 یہیں پر ماﺅں کی قسمت میں کیوں لکھا گیا ہے
 کہ جواں بیٹوں کی لاشوں پر مسلسل بین کرنے ہیں ۔۔
وہی کیوں صورتِ احوال پھردشتِ وفا میں ہے
مرآقا مرے مولا
مرے مولا یہ بازو دشمنِ امت نے کاٹے ہیں 
اجالے مانگتے تھے اس لئے ظلمت نے کاٹے ہیں
مرے مولایہ آنکھیں دستِ باطل نے نکالی ہیں 
دفاع اپنا یہ کرتی تھیں سو قاتل نے نکالی ہیں
مرے مولا یہ سینہ ظلم کے خنجر نے چیرا ہے 
دھڑکتا تھا مرادل اس لئے پتھر نے چیرا ہے
مرے مولا یہ پاﺅں آگ کے تودوں نے کچلے ہیں
ابھی ہونے ہیں جو ان تیل کے سودوں نے کچلے ہیں
مرے مولا یہ چہرہ موت کی چیلوں کے نرغے میں
سمندر پار سے آئے ہوئے فیلوں کے نرغے میں 
مرے مولا ابابیلوں کے لشکر بھیج صحرا میں 
جنہوں نے رُت بدل دی تھی وہ کنکر بھیج صحرا میں
اگر ایسا نہیں ممکن
مرے ہارے ہوئے مظلوم دل کو مرثیہ خوانی کی ہمت دے ۔
ہمارے عہد کے اس کربلا پرتیری امت کی یہ مجبوری بھی کیسی ہے
 کہ ہم مرتے ہوﺅں پر بین کرنے سے گریزاں ہیں۔
مجھے تیری قسم سب صاحبان ِ حرف گم سم ہیں
یہ ان کی خامشی میں خوف ہے یا درہم و دینار کا لالچ۔۔۔
مرے آقا مجھے کہنے دے یہ نفرت کے قابل ہیں 
قلم کو جو پکڑتی ہیں وہ تینوں انگلیاں بہتر ہے کٹ جائیں کہ سچائی نہیں لکھتیں۔
مرے مولا مرے آقا
طلسم ِ مرگ کے جادومیں محوِ استراحت ہیں
نگر زنبیلِ ظلمت رُو میں محو استراحت ہیں
شبیں چنگاریوں کے بستروںمیںخواب بنتی ہیں
اندھیرے راکھ کے پہلو میں محوِ استراحت ہیں
خموشی کا بدن ہے چادرِ باردو کے نیچے
کراہیں درد کے تالو میں محوِ استراحت ہیں
پہن کر سرسراہٹ موت کی ، پاگل ہوا چپ ہے
فضائیں خون کی خوشبو میں محوِ استراحت ہیں
کہیں سویا ہواہے زخم کے تلچھٹ میں پچھلا چاند
ستارے آخری آنسو میں محوِ استراحت ہیں
ابھی ہو گا کسی بم سے اجالا۔۔بس ابھی ہوگا
یہ خطہ پُرسعادت، اے فروغِ دیدہ ءتقویم 
ابھی ہو گا شعاعوں کے لہو سے آئینہ خانہ
مرے مولا مگر مجھ کو
حسین ابن علی کے مرثیہ خوانوں کی آوازیں سنائی کیوں نہیں دیتیں
نیا اِک کربلا آبادپھر خاکِ نجف پر ہے
دمشق و قاہرہ میں ہے
یمن میں ہے عدن میں ہے
کوئی جلتے گھروں کے مرثیے لکھے
لہو لتھڑے سروں کے مرثیے لکھے۔۔
لکھے کہ کربلاغاصب کی بیعت کر نہیں سکتی۔
لکھے شبیر کا جو ماننے والا ہے
 وہ توپوں بموں سے ڈر نہیں سکتا۔
لکھے کچھ تو لکھے کہ فاختائیں خون میں ڈوبی ہوئی ہیں۔
لکھے کچھ تو لکھے کس نے یہاں زیتون کی ٹہنی سے بم باندھا ہوا ہے۔
لکھا جائے کہیں کچھ امنِ عالم کی تمنا میں ۔
اُفق پر شام کی سرخی کسی سفاک شب کی پھر بشارت دے رہی ہے۔
مرے مولا مرے آقا
طلوعِ صبح سے پہلے بھیانک روشنی اٹھتی ہے گلیوں میں
دھماکہ خیز آوازوں سے بھرجاتی ہیں دیواریں
پرندے سہم جاتے ہیں
ہوائیں اوڑھ لیتی ہیں دھویں کی سرمئی چادر
درختوں سے اترتی راکھ مل کر اپنے چہرے پر
کہیں پر فاختہ کا ادھ جلاچہرہ
کہیں زیتون کی جلتی ہوئی لکڑی
کہیں تہذیب کے چولہے سے آئے گوشت کی خوشبو
کسی گڑیا کی ٹانگیں
کھلونے کا کوئی ٹکڑا
کہیں مجروح ہونٹوں کی لکیریں سی
کہیں پر کوئی فیڈر جسمِ حوا کا
اندھیری رات سی اینٹیں
کواڑوں کے سیہ تختے
نظر میں درد کا ملبہ
طلوعِ صبح سے پہلے
سمندرپار سے آتے اجالوں سے بچالے،کالی کملی میں چھپا لے
مرے آقا مرے مولا انہیں آواز دیتا ہوں 
جو انسانی سروں کی حرمتوں کے گیت لکھتے ہیں۔
جو تہذیبوں کے حامل ہیں۔
جہاں مرتی ہوئی بلی پہ آنکھیں بھیگ جاتی ہے 
وہ جن کے دل دھڑکتے ہیں۔
انہیں آواز دیتا ہوں۔
لکھے کوئی یہ کیسی بد نما تہذیب دنیا پر مسلط ہوتی جاتی ہے۔
جو کالے سونے کی خواہش میں انسانی سروں کو روندتی جاتی ہے ٹینکوں سے
انہیں آواز دیتا ہوں جنہوں نے امن کے نوبل پرائز اپنے سینے پر سجائے ہیں۔
کوئی توبے گناہوں کے لہو آشام موسم پر ذرا بولے ۔۔
 چلو دھیمے سروں میں ہی سہی۔۔۔
آواز تو آئے مگر یہ امن کے پیغام براپنے خدائے ظلم کی ناراضگی سے سہم جاتے ہیں
خدائے ظلم کے باغی قبیلوں کو سلام۔۔
انہیں آواز دیتا ہوں
 محبت کے جو نغمے گنگناتے ہیں۔
جنہیں دعویٰ مسیحا کی وراثت کا
مسیحا ۔زندگی کا جو پیغمبرتھا۔
مسیحا جوفروغِ عشقِ انساں میں صلیبوں پر سجا تھا۔۔۔
کسی کو قتل کرنا اس کے مذہب میں روا ہو ہی نہیں سکتا۔
مگر خاموش کیوں ہیں ابن ِ مریم کو خدائے لم یزل کا کچھ نہ کچھ یہ ماننے والے 
کہ انسانوں کو جرم ِ بے گناہی کی سزائیں مل رہی ہیں۔
نہیں شاید۔۔انہیں محسوس ہوتا ہے 
کہ توپوں سے نکلتی آگ تو تاریکیاں کافورکرتی ہے
بموں کی آتشیں برسات تو اس عہد تازہ کا چراغاں ہے
مرے مولا موے آقا ابھی رنگیں
گٹاروں پر بجائے جائیں گے جنگی ترانے
پریڈوں کے توازن پر نئے ردہم بنیں گے
ہر اک سم پر رکھا جائے گا اک کومل دھماکہ
کھنکتی فائرنگ سے دلرباسرگم بنیں گے
نئے گیتوں سے استقبال ہو گا فوجیوں کا
فضائے شب میں اتش بازیوں کے رنگ ہو نگے
بہاریں رمبا ناچیں گی شرابوں کے چمن میں
جدھر دیکھو گے سرافرازیوں کے رنگ ہو نگے
کسی کو اس سے کیا کہ کتنے نوحے، کتنی نظمیں
کہیں ماتم کی تھاپوں پر ہوائیں گا رہی ہیں
مقفل کھڑکیاں کی جائیں گی دل کے مکاں کی
جہاں سے بین کرنے کی صدائیں آرہی ہیں
مرے مولا مر آقا
انہیں آواز دیتا ہوں۔جو کہتے ہیں
محبت کا ہے ایماں بجلیوں پر مسکرادینا ۔۔
محبت کا ہے مذہب آگ پانی میں لگا دینا۔
محبت ہونکتے شعلوں کو سینے سے لگاتی ہے ۔
محبت آتشِ نمرور میں بھی کود جاتی ہے۔
اُٹھو اِس کربلا کی آگ پر پانی نہیں آنسو ہی برسا دو۔۔۔
مگر مولا
گلی میں دور تک پھیلی ہوئی ہے
سجاوٹ قمقموں کی
دریچوں سے دکھائی دے رہے ہیں
خوبصورت سے صنو بر
روشنی کا رنگ پہنے
درو دیوار پر اوپر سے نیچے تک
نفاست سے، بڑی ترتیب سے
آسودگی کے بلب جلتے جا رہے ہیں
صلیبیں تک سجائی جا رہی ہیں
کسی دہلیز کے باہر کھڑا ہے
کوئی باریش فربہ سا مجسمہ
جس کے اندر سے شعاعیں پھوٹتی ہیں
دوسو بارہ واٹ کی
کرسمس کے اجالے رات کی تصویرمیںجل بجھ رہے تھے
اندھیرا بڑھ رہا ہے دور صحرا میں کہیں پر
باوجوداسکے ہزاروں واٹ کے بم پھٹ رہے ہیں
مرے مولا
اُسے آواز دیتاہوں 
کہ شاید انجمن اقوامِ ِعالم نیند سے جاگے۔۔
مگر کیسے۔ ۔۔اسے توظلمتوں کے تازہ رکھوالے نے
 اپنے گھر میں لونڈی کی طرح رکھا ہوا ہے۔
کسی مالک کو اس کی ایک معمولی کینز آخر کہاں تک روک سکتی ہے۔۔
 ۔اُسے آواز دینا خود فریبی کا تسلسل ہے۔
مگر ہر ڈوبنے والاسہارے کےلئے تنکے پکڑتا آرہا ہے۔
انہیں آواز دیتا ہوں جو خود کو خادمِ الحرمین کہتے ہیں۔
مگر اِن بادشاہوں کوتو اے میرے رسول ِ اقدس و اعظم
ترے معصوم متوالوں کی چیخیں تک سنائی ہی نہیں دتیں۔
مری مدہم صدا اُن کی سماعت میں اتر سکتی ہے کیسے۔۔۔
مرے آقا ! سوا تیرے 
کسے آواز دوںکوئی دکھائی ہی نہیں دیتا۔۔ 
کہیں سرمایہ داری نے ہمیں بیچا ہے جی بھر کے
کہیں جاگیرداری نے ہمیں لوٹا ہے جی بھر کے
ملوکیت نے نوچے ہیں کہیں پر خال و خد اپنے
صلیبوں سے نصاریٰ نے کہیں مارا ہے جی بھر کے
یہودیت کے پاﺅں ہیں مسلسل جسم پراپنے
مرے مولا جہاں بھر میں ہیں بکھرے دل ، جگر اپنے
پڑے ہیں نیل کے ساحل سے لے کرکاشغر تک ہم
کئی حصوں میں بانٹا ہے بدن کوکاٹ کر اپنے
کہوں کس سے کہ ظالم کے پکڑ لے ہاتھ کو جا کر 
ستم کی آخری حدہے ۔
کہیں دنیا یہ کانٹوں سے بھری وادی نہ بن جائے ۔
مجھے بس اتنا کہنا ہے کہ ہراک پھول کو کھلنے کا حق ہے۔۔
 یہ آزادی ہے خوشبو کو کہ ہرگلشن کومہکائے 
طلوعِ صبح کامنظر ہے ہر اِک آنکھ کی خاطر ۔۔ 
ہوا ہر شخص کوسانسیں فراہم کرتی رہتی ہے 
جہاں میں ہر کسی کوپورا حق ہے
 اپنی مرضی کے مطابق زندگانی صرف کرنے کا۔۔۔
جنم جن کو دیا آزاد ماﺅں نے ۔۔
انہیں طوق ِ غلامی کوئی پہنا ہی نہیں سکتا۔۔
مرے آقا!مری اتنی دعا ہے بس ۔۔
زمیں پر امن کی تہذیب غالب ہو۔
سیہ توپوں کے تیرہ تر دھانوں میں ملائم فاختاﺅں کا بسیرا ہو۔۔
کوئی زیتون کی ٹہنی کہیں بمبار طیاروں میں اُگ آئے۔
اگر چہ ایسا ہوتا تو نہیں لیکن خدا کے کار خانے میں کبھی یہ ہو بھی سکتا ہے ۔۔
 خدا تو پھر خدا ہے نا۔۔
میر ے آقا مرے مولا
ضرورت ہے تری اُس رحمتہ العالمینی کی
کہ جو سایہ فگن ہے آسمانوں اور زمینوں پر
اسے برسا دے امت کے لہو آباد سینوں پر

Thursday, 1 November 2012


Curriculum Vitae

Name   :         Mansoor Afaq  (Mr)


Date of birth: 17/02/1962


Address :

 Office  :        89 High Street Dudley DY1 1QP UK

Home  :        31 St Andrews Street
                    Netherten, Dudley
                    West Midlands UK
                    DY2 0QD

Phone Number:      01384 455484        
Mobile  :                 07869734157
E mail :                  mansoorafaq@gmail.com
Language ;           Saraiki. ,Urdu
Nastionalty :         British

Acadamic achievement : M A Urdu language 1985/86 - Punjab University,   Lahore, Pakistan

Practical Experience 1984 - 1990

Literature Publications

Magazines
·                 Purchoal (monthly) - Saraiki language
·                 Khawab (monthly) - Urdu language
·                 Paigham e Saroash (quarterly) - Urdu language
·                 Shahadatain (monthly) - Urdu language

Newspapers
·                 Mahari (weekly) - Saraiki language Lahore

Books
·                 Chahra Numa (Urdu Articles) - 1984
·                 Afaq Numa (Urdu Poetry) - 1986
·                 Saraiki Grammer - 1988


Responsible Positions
·                 Director Adbiat, Mianwali Acadamy - 1986 to 1990
·                 Chairman Peoples' Cultural Wing, District Mianwali - 1988 to 1990
·                 President All Pakistan "Sanwal Sangat", Lahore - 1989 to 1990
          (Literature/Music Organisation)

Other Experiences  1990 – 2010
Television, Video & Audio Production, Newspapers, Book publications and Advertisement Campaign

Television
·                 Script writing, Production and Direction

Script writing
·                 7 serials, 1 series, 85 plays, 6 documentaries and 10 musical programmes

Serials
·                 Nimaksar (Urdu Drama serial, duration 50 minutes, 13 episodes) - 1990 PTV
·                 Zameen (Urdu Drama serial, duration 50 minutes, 13 episodes) - 1991 PTV
·                 Pani Par Bunyad(Urdu Drama serial, duration 50 minutes, 03 episodes) - 1991 PTV
·                 Pathar (Urdu Drama serial, duration 50 minutes, 15 episodes) - 1992/93 NTM  and  Zee London
·                 Soya Hua Shehar(Urdu Drama serial, duration 50 minutes, 04 episodes) - 1993 PTV
·                 Dunya (Urdu Drama serial, duration 50 minutes, 07 episodes) - 1994 PTV
·                 Dhan Koat (Urdu Drama serial, duration 50 minutes, 13 episodes) - 1998 PTV World

Drama Series
·                 Roshni (Urdu Drama series, duration 25 minutes, 13 episodes) - 1992/93 PTV

Plays
(A few examples of plays in Urdu, Saraiki and Punjabi languages)
·                 Satwan Sakh (Saraiki play, duration 50 minutes) - 1990 PTV
·                 Ki Janaan Main (Punjabi play, duration 50 minutes) - 1990 PTV
·                 Kalak (Urdu play, duration 25 minutes) - 1990 PTV
·                 Gadi Kook Marandi Ai (Saraiki play, duration 25 minutes) - 1990 PTV
·                 Aandhi (Urdu play, duration 25 minutes) - 1992 PTV
·                 Suraab (Urdu play, duration 25 minutes) - 1992 PTV
·                 Dujha Kinara (Saraiki play, duration 25 minutes, 3 episodes) - 1993 PTV
·                 Long Play Gudi Theia Gudian for Aapna Channel UK
Documentaries - all in Urdu language, duration 25 minutes

1)       For World Bank (UNDP)
·                 Pehli Fasl (Environment of Kashmir) - 1998 / 1999
·                 Land Sliding (Geological situation in Kashmir) - 1998 / 1999
·                 Tameer (World Bank: Northern Resource Management - 1998 / 1999

(Project's performance in Kashmir)
·                 Helping Hands (UNDP's performance in Kashmir) - 1998 / 1999

2)       For FC(Folk Concept) Studios
·                 Biloat Shareef (possessed women and remedies) - 1997 / 1998
·                 Jheel Saif Ul Malook (Legendary history of the place) - 1997 / 1998

Musical Programmes
·                 Maigh Malhar (Saraiki lyrics writing, 13 episodes) - 1992 /1993 PTV
·                 Video Magazine (Urdu lyrics writing, 13 episodes) - 1993 NTM
·                 Aabshar (Urdu lyrics writing, 26 episodes) - 1995 PTV
·                 Issah Khailwi Folk (Urdu lyrics and script writing, - 1995 PTV
          duration 25 minutes, 13 episodes)

Video Production & Direction
1)       For private production company - Message International, Lahore & Islamabad, Pakistan
·                  Pathar (Urdu Drama serial, duration 50 minutes, 15 episodes) - 1992/93 NTM & Zee London
·                 Video Magazine (Urdu lyrics writing, 13 episodes) - 1993 NTM
·                  Shaam (Urdu drama serial, duration 25 minutes, 13 episodes) - 1996 PTV2  -for Ministry of Special Education and Social Welfare, Pakistan

2)       For a private company - Media Vision, Islamabad, Pakistan
·                 Gora Pardes Main (Urdu comedy drama serial, duration 25 minutes, 13 episodes)      - 1997
·                 Hello Pakistan (Urdu Talk Show, duration 25 minutes, 13 episodes) - 1997

3)       For World Bank (UNDP) – all in Urdu language, duration 25 minutes
·                 Pehli Fasl (Environment of Kashmir) - 1998 / 1999
·                 Land Sliding (Geological situation in Kashmir) - 1998 / 1999
·                 Tameer (World Bank: Northern Resource Management - 1998 / 1999
          Project's performance in Kashmir)
·                 Helping Hands (UNDP's performance in Kashmir) - 1998 / 1999

4)       For FC (Folk Concept) Studios
·                 Biloat Shareef (possessed women and remedies) - 1997 / 1998
·                 Jheel Saif Ul Malook (Legendary history of the place) - 1997 / 1998
·                 TV Plays’ script writing training course - 1996
·                 7 own lectures’ contribution

Audio Production
·                 Produced audio school courses for the blind & visually impared children for the Ministry of Special Education in Pakistan - 1997
·                 Produced many Audio Masters of renowned artists for various commercial companies for instance : Ustad Salamat Ali Khan, Ustad Fatah Ali Khan, Ustad Shagan, Atta Ullah Issah Khailwi, Arif Lohaar, Surrayya Khanum, Tasawar Khanum, Mahnaz, Azra Jahan, Ghulam Abbas, Anwar Rafique, Humarah Channa, Humarah Arshad, Mansoor Malangi etc. - 1995 to 1999

Newspapers -  Writing Contribution
·                 Daily Own Urdu poetry contribution - Daily Mashriq Lahore (Newspaper) - 1990 - 1992
·                 Daily Urdu column contribution - Daily Nawa e Waqt Lahore (Newspaper) - 1990 - 1994
·                 Weekly interviews with leading literature role models & film celebrities e.g. Munir Niazi, Shehzad Ahmed, Ahmad Nadeem Qasmi, Noor Jahan (late) etc. 1990 - 1994 - Daily Nawa e Waqt Lahore (Newspaper)
·                 Feature writing for weekly – Family Magazine, Lahore - 1993 – 1994
·                 Daily Urdu column contribution - Daily Nawa e Waqt Rawalpindi (Newspaper)- 1997

Responsible position
·         Chief Editor Daily Islamabad (News paper) – 1999
·         Communication and Public relation Officer (British Muslim Forum)
2006 – 2009
·            Country Director for Pakistan, Deens International UK in collaboration with   
           Foreign Office United Kingdom for the project “I am Muslim I am British”
          2009 - 2010

Books
·                 Saraiki Dramain  - 1996
·                 Main Who Aur Atta Ul Haque Qasmi – 1993
·                 Gul Pashi (a poetic work for Ahmad Nadeem Qasmi – in conjunction with Mansoorah Ahmad) .1996/1997
·                 Neend Ki Notebook - a contemporary URDU poetry creation – 2005
·                 Arif Nama  2006
·                 Main ishiq main hoon  2007

Advertising Campaigns
·                  Musical stage shows – organized in every city of Pakistan as a promotional season for Shell Pakistan regarding a new lubricant product - 1995
·                 Fund raising events for children with disabilities – Musical stage shows organized for Ministry of Special Education, Pakistan - 1996
UK Engagements

Television & Plays

·                 Commercials’ production for Pakistani Channel (ARY Digital) {various business products} - 2000 – 2001
·                 Khalsa (Punjabi drama – script/production writing) - 2002
·                 Written, directed and produced an educational stage drama for the Education Department Dudley in 2005
·                 Produced an introductory debate programme for a Punjabi Channel in 2005/6


Newspaper

·                 Chief Editor Weekly “ Ravi & East” (a 32 pages coloured local newspaper) - 2001-2002 ----Produced and published in Bradford, England with the co-operation of “Daily Mirror”
·                  Weekly literature column contribution for “Daily Jang” - from 2002 to 2008
Conducted “Jang Forums” -  from 2003 to 2008
·                 Regularly produced a monthly community newspaper now called The British Muslim for Dudley Muslim Association as Managing editor from 2004 to 2008


Magazine

·                  Chief Editor monthly “Un-Quote” (a first ever 300 pages literature magazine) produced and published regularly from UK since 2002


Shows

·                 Organised and conducted Urdu/Punjabi musical events (Issah Khailwi commercial events) in Bradford, Manchester, Leeds, Dewsbury, Huddersfield, etc. - 2000 to 2002
·                 Organised and conducted Urdu/Punjabi literature events (mushairas) in Bradford, Manchester, Leeds, Dewsbury, Huddersfield, Nottingham, Birmingham and London etc. – since 2000 to date
·                 Recently conducted Urdu “International Conference” literature & poetry related mushaira and poets’ introduction also launched Nasir Kazmi’s poetry translations’ presentation - 2004



CD production

·                 Produced Official Theory Test for car drivers & motor cyclists’ first ever edition of Urdu CD (Driving lessons & motorwar/highway code related information) for DVLA - 2000
·                 Currently producing CDs for various Urdu poetry writers in the West (Ghazals’ vocal and composition)
·                 Produced a promotional CD for the Motivations (a children's homes agency) in Dudley - 2005
·                 Produced a promotional CD for the Society of Culture & Heritage (SOCH) -  2006
·                 Produced a promotional CD for Urdustreet.com -  2006


Other involvements

·                 Various literature & Cultural Groups’ membership, active part playing and voluntary responsibilities i.e. Bradford Gymkhana, Punjabi Mahfil, Bazm e Ilm O Fun, Urdu Forum, Third World Literature Institute etc.

·                 Director of the largest Urdu website Urdustreet.com since 2004

·                 Executive Director “Society of Culture & Heritage”


·                 Media campaign “I am Muslim, I am British” – a year long project to combat terrorism (funded by UK Foreign Office)…2009 – 2010